Breaking News
Home / تازہ ترین / چترال چیمبر آف کامرس اینڈ انڈسٹری کے زیر اہتمام پہلی مرتبہ چترال میں انوسٹرزکانفرنس کا انعقاد

چترال چیمبر آف کامرس اینڈ انڈسٹری کے زیر اہتمام پہلی مرتبہ چترال میں انوسٹرزکانفرنس کا انعقاد

چترال(محکم الدین)چترال چیمبر آف کامرس اینڈ انڈسٹری کے زیر اہتمام پہلی مرتبہ چترال میں انوسٹرزکانفرنس کا انعقاد ہوا جس کے افتتاحی تقریب کے مہمان خصوصی سیکرٹری معدنیات خیبر پختونخوا ظہیر الاسلام تھے جبکہ دیگر مہمانوں میں ممتاز صنعت کار اور ورلڈ چیمبر کے نائب صدر سنیٹر حاجی غلام علی، سابق صدرفیڈریشن آف پاکستان چیمبر آف کامرس اینڈ انڈسٹریز حاجی فضل الٰہی، چیرمین سٹینڈنگ کمیٹی سرحد چیمبر آف کامرس ریاض خٹک، صدر فاٹا چیمبر شعیب خان، ڈائریکٹر پی سی ایس آئی آر لیبارٹریز فریداللہ خان، اسسٹنٹ ڈائریکٹر ڈاکٹر جاوید بنگش، ڈائریکٹر ٹریڈ ڈویلپمنٹ اتھارٹی پاکستان سریر الدین اور کو آرڈنیٹر اے آرکے پی سمیڈا فضل حسین، اسسٹنٹ کمشنر چترال عبد الاکرم موجود تھے۔ چترال کی بزنس کمیونٹی سے تعلق رکھنے والے افراد، ادانشور،سیاسی نمائندگان اور مقامی عمائدین نے بڑی تعداد میں اس کانفرنس میں شرکت کی۔ اس موقع پر سیکرٹری معدنیات نے خطاب کرتے ہوئے کہا کہ چترال کا مستقبل بہت تابناک ہے کیونکہ اس میں چترال کی ترقی کیلئے سوچ بچار کرنے والے افراد موجود ہیں۔ انہوں نے کہاکہ چترال کے پہاڑوں میں بے بہا خزانے چھپے ہوئے ہیں جن کی دریافت وقت کی ضرورت ہے۔ لیکن بدقسمتی سے اس سیکٹر میں اب تک آمدنی نہ ہونے کے برابر ہے۔ انہوں نے کہا کہ ہم نے اس سیکٹر کی آمدن کو 48 کروڑ سے بڑھا کر 2ارب 30کروڑ تک پہنچا یا ہے۔ جبکہ ہمارے اگلے سال کا ٹارگٹ پانچ ارب روپے ہے۔ ظہیر الاسلام نے کہا کہ ہم نے ڈیپارٹمنٹ سے کالی بھیڑوں کا صفایا کر دیا ہے اور آئندہ یہ شعبہ دن دوگنی رات چوگُنی ترقی کرے گا۔ انہوں نے کہا کہ وہ چترال کے تمام مسائل صوبائی حکومت کی میز تک پہنچانے میں اپنا کردار ادا کریں گے۔ چترال میں معدنیات کی دریافت میں کام کریں گے اور بیرونی انوسٹرز کو یہاں لانے کی کو شش کریں گے۔ ظہیر الاسلام نے کہا کہ یہ ہماری بہت بڑی کمزوری ہے کہ پاکستان سے ایک سو ٹن جم سٹون باہر کی مارکیٹ میں کٹنگ، پالشنگ کے بعد فروخت ہوتی ہے۔