Breaking News
Home / تازہ ترین / چترال کو بجلی کی فراہمی کے حوالے سے سابق وزیر اعظم کے اعلان کو عملی جامہ پہنانا وفاقی حکومت کی ذمہ داری ہے/مولانا عبدالاکبر چترالی

چترال کو بجلی کی فراہمی کے حوالے سے سابق وزیر اعظم کے اعلان کو عملی جامہ پہنانا وفاقی حکومت کی ذمہ داری ہے/مولانا عبدالاکبر چترالی

چترال(بشیر حسین آزاد)جماعت اسلامی کے مرکزی راہنما مولانا عبدالاکبر چترالی نے واپڈا کی طرف سے گولین گول بجلی گھر سے چترال کو بجلی کی فراہمی میں رکاوٹ ڈالنے کی خبر پر برہمی کا اظہار کرتے ہوئے مطالبہ کیا ہے کہ سابق وزیر اعظم نواز شریف کے اعلان کے مطابق اس سال دسمبر تک چترال کو گولین گول بجلی گھر سے بجلی کی فراہمی یقینی بنائی جائے۔ چترال پریس کلب میں ایک پریس کانفرنس سے خطاب کرتے ہوئے جنرل الیکشن 2018کیلئے چترال سے جماعت اسلامی کے نامزد امیدوار برائے قومی اسمبلی مولانا عبدالاکبر چترالی نے کہاکہ ایسی اطلاعات سامنے آرہی ہیں کہ واپڈا حکام چترال کو بجلی کی فراہمی میں روڑے اٹکارہے ہیں جوکہ افسوسناک امر اور وزیر اعظم کے اعلان کی دھجیاں اڑانے کے مترادف ہے۔ انہوں نے وفاقی حکومت سے پر زور مطالبہ کیا کہ وہ اس امر کا نوٹس لے اور سابقہ وزیر اعظم کے اعلان کو عملی جامہ پہنانے کے عمل کو یقینی بنائے۔ مولانا عبدالاکبر نے کہا کہ گزشتہ سال سابق وزیر اعظم نے چترال میں ایک جلسہ عام میں اعلان کیا تھا کہ گولین گول پاؤر پراجیکٹ کی پہلی فیز کی تکمیل کے بعد 30میگاواٹ بجلی دسمبر 2017 سے چترال کو فراہمی شروع ہوگی لیکن معتبر ذرائع نے بتایا ہے کہ واپڈا نے پراجیکٹ حکام کو اس سے باز رہنے کا حکم دے دیا ہے جس کی وجہ سے چترالی عوام میں کھلبلی مچ گئی ہے جوکہ ایک عرصہ دراز سے بجلی سے محروم ہیں۔ انہوں نے کہاکہ وزیر اعظم شاہد خاقان عباسی کوچاہئے کہ وہ سابق وزیر اعظم کے ا علان کو عملی جامہ پہنائے۔ مولانا چترالی نے کہاکہ جوٹی لشٹ چترال کے مقام پر 30میگاواٹ کی تقسیم کے لئے بننے والی گرڈ اسٹیشن کے سامان بھی پہنچ گئے ہیں لیکن ان کی تنصیب کے کام میں تاخیر کیا جارہا ہے جوکہ قابل مذمت ہے۔ انہوں نے کہاکہ ایون، بروز، گانگ اور گہریت میں بھی بجلی کے پول لگانے کا کام مکمل کیا جائے اور لوٹ کوہ سب تحصیل کے تینوں یونین کونسلوں میں بھی فراہمی کو بھی یقینی بنائی جائے اور کوہ یونین کونسل سمیت جہاں صوبائی حکومت کے محکمہ پیڈو کے پول اور ٹرانسفارمر ہیں، انہیں بھی واپڈا کے حوالے کئے جائیں۔ مولانا چترالی نے کہاکہ پیڈو چترال میں مکمل طور پر ناکام ہوچکی ہے اس لئے اس کے اثاثہ جات واپڈا کے حوالے کئے جائیں۔ انہوں نے گولین گول بجلی گھر کی تعمیر کے لئے سرمایہ فراہم کرنے پر سعودی عرب، کویت اور متحدہ عرب امارات کی حکومتوں کا بھی چترالی عوام کی طرف سے شکریہ ادا کیا۔ مولانا چترالی نے ریشن میں پیڈو کے ٹرانسفارمروں سے ریشن بجلی کے صارفین کو بجلی کی فراہمی فوری طور پر شروع کرنے اور بونی میں بل نہ ادا کرنے والوں کی بجلی کاٹ کر عام صارفین کو بجلی کی فوری فراہمی کا بھی مطالبہ کیا۔پریس کانفرنس کے موقع پر جماعت اسلامی کے دیگر راہنما مولانا اخونزادہ رحمت اللہ، حکیم مجیب اللہ، حافظ فضل اللہ، شمشیر خان، جہانزیب خان، حفیظ الدین اور دیگر بھی موجود تھے۔